empty
 
 

15.10.202113:24:00UTC+00امریکی ریٹیل سیلز ستمبر میں غیر متوقع طور پر بڑھی ہے

محکمہ تجارت نے جمعہ کے روز ایک رپورٹ جاری کی جس میں ستمبر کے مہینے میں امریکی ریٹل سیلز میں غیر متوقع اضافہ دکھایا گیا ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اگست میں 0.9 فیصد کی اضافے کے بعد ستمبر میں ریٹل سیلز میں 0.8 فیصد اضافہ ہوا۔ فروخت میں مسلسل اضافہ معاشی ماہرین کے لئے حیرت کا باعث بنا ہے جنہیں توقع یہ تھی کہ خوردہ فروخت میں گزشتہ ماہ کے دوران 0.7 فیصد اضافے کے مقابلے میں 0.2 فیصد کی کمی آئے گی۔ موٹر وہیکل اور پارٹس ڈیلرز کی فروخت میں تیزی نے فروخت میں اضافے میں حصہ ڈالا ، اگست میں 3.3 فیصد کمی کے بعد ستمبر میں آٹو کی فروخت میں 0.5 فیصد اضافہ ہوا ہے تاہم آٹو سیلز کے علاؤہ اگست میں 2.0 فیصد کی اضافے کے بعد ستمبر میں ریٹیل سیلز میں 0.8 فیصد کی قدرے مضبوط اضافہ ہوا۔ ماہرین معاشیات نے توقع کی تھی کہ گزشتہ ماہ کے دوران 1.8 فیصد اضافہ کے مقابلے میں آٹو سیلز کے علاؤہ سیلز میں 0.5 فیصد اضافہ ہوگا۔ کھیلوں کے سامان، شوق، موسیقی اور بک سٹورز کی فروخت میں 3.7 فیصد اضافہ ہوا جبکہ عام تجارتی اسٹورز، گیس اسٹیشنوں اور کپڑوں اور لوازمات کی دکانوں کی فروخت میں بھی نمایاں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اگست میں 5.7 فیصد اضافے کے بعد ستمبر میں نان سٹور ریٹیلرز کی فروخت میں 0.6 فیصد اضافہ ہوا جبکہ گزشتہ ماہ میں 0.2 فیصد اضافے کے بعد فوڈ سروسز اور مشروبات فروخت میں 0.3 فیصد اضافہ ہوا ہے اگست میں 2.6 فیصد اضافہ کے بعد ستمبر میں کور ریٹیل سیلز، جس میں آٹو موبائلز، گیسولین، بلڈنگ میٹریل اور فوڈ سروسز شامل نہیں ہیں، میں 0.8 فیصد اضافہ ہوا ہے آکسفورڈ اکنامکس کے چیف امریکی اکانومسٹ گریگوری ڈاکو نے کہا کہ جب سے کووڈ کی صورتحال پیدا ہوتی ہے تو گھریلو اخراجات میں مسلسل کے توازن کو مسلسل ترتیب دیا جا رہا ہے اور جب اشیاء اور خدمات دستیاب نہیں ہوتی ہیں یا قیمتیں بہت زیادہ سمجھی جاتی ہیں تو میانہ روی سامنے آتی ہے انہوں نے مزید کہا کہ اگرچہ مجموعی طور پر خوردہ فروخت کووڈ سے پہلے کی سطح سے 19 فیصد زیادہ ہے اور بنیادی فروخت 22 فیصد زیادہ ہے اور یہ نقاط اکتوبر کے اوائل میں صارفین کے مثبت طرز عمل کا اظہار ہیں



ابھی فوری بات نہیں کرسکتے ؟
اپنا سوال پوچھیں بذریعہ چیٹ.