empty
 
 

06.09.202110:24:00UTC+00تیل کی قیمتیں مانگ کے خدشات پر گرتی ہیں۔

دنیا کے سرفہرست بَرآمَد کار سعودی عرب کی جانب سے ہفتے کے آخر میں ایشیائی خریداروں کے لیے اپنی قیمتوں میں کمی کے بعد مانگ کے تقطۂ نظر پر خدشات کے درمیان پیر کو تیل کی قیمتوں میں کمی آئی۔ بینچ مارک برینٹ خام مستقبل نصف فیصد کی کمی سے 72.22 ڈالر فی بیرل پر آگیا، جبکہ امریکی خام مستقبل 0.6 فیصد کم ہوکر 68.89 ڈالر پر آگیا۔ امریکی سپلائی کے ذریعے نقصانات کو محدود کیا گیا تھا جو ممکنہ طور پر محدود رہے گی کیونکہ سمندری طوفان ایڈا سے بحالی جاری ہے۔ سرکاری تیل کمپنی سعودی آرامکو نے اتوار کو ایشیا اور بحیرہ روم میں خام تیل کی فروخت کی قیمتوں میں کمی کی اور مانگ اور عالمی رسد میں اضافے کے خدشات کے درمیان شمال مغربی یورپ اور امریکہ کے لیے قیمتوں میں کوئی تبدیلی نہیں کی۔ اکتوبر میں ایشیا کو فروخت ہونے والے تمام خام گریڈوں کی قیمتوں میں کم از کم فی بیرل 1 ڈالر کی کمی کی گئی ہے، جو کہ توقع سے کہیں زیادہ ہے۔ ایشیا کے لیے متوقع سے زیادہ کٹوتی کئی عوامل کی وجہ سے ہوئی، جس میں خطے کی تیل کی مانگ میں کمزوری کی بحالی، اوپیک+ آؤٹ پُٹ پابندیوں میں نرمی اور سعودی کی منڈی کے حصص کو دوبارہ حاصل کرنے کی خواہش شامل ہے۔



ابھی فوری بات نہیں کرسکتے ؟
اپنا سوال پوچھیں بذریعہ چیٹ.